گیارہ ہزار قیدیوں کو رہا کرنے کا مہاراشٹر حکومت کا فیصلہ

0
9

ممبئی :27؍مارچ :کورونا وائرس کے بڑھتے انفیکشن کو دیکھتے ہوئے مہاراشٹر سرکار نے ریاست کی جیلوں میں بند گیارہ ہزار قیدیوں کو رہا کرنے کا فیصلہ لیا ہے ۔ یاست کے وزیر داخلہ انل دیشمکھ نے اس بات کا اعلان کیا ہے اس سے پہلے دہلی ، ہریانہ اور پنجاب بھی قیدنوں کو رہا کرنے کا قدم اٹھا چکے ہیں ۔ مہاراشٹر کے وزیر داخلہ انل دیشمکھ نے بتایا مہاراشٹر کی جیلوں میں قید قریب گیارہ ہزار قیدیوں جنہیں سات سال سے کم کی سزا ملی ہے انہیں پیرول پر رہا کیا جائے گا ۔ وزیر داخلہ انل دیشمکھ نے ٹویٹ کر کے اس فیصلے کی جانکاری دی ۔ وزیر داخلہ نے کہا قریب گیارہ ہزار قیدی یا ملزم جو سات سال کی سزاکے معاملےمیں بند ہیں انہیں پیرول پر رہا کیا جا سکتا ہے ۔ انہوں نے بتایا میں نے پوری ریاست کے جیلوں کو مناسب احکامات جاری کر دیا ہے ۔ انہوں نے بتایا کہ مہاراشٹر میں قریب ۶۰؍ جیلیںہیں جن پر یہ فیصلہ نافذ ہو گا حالانکہ انہوں نے واضح کیا ہے کہ دہشت واد یا معاشی جرائم کے معاملوں میں بند قیدیوں کو رہا نہیں کیا جائے گا ۔ ہریانہ میں کورونا وائرس پھیلنے کے اندیشہ کے درمیان جیل میں قیدیوں کے دباؤ کو کم کرنے کے لئے سپریم کورٹ کے ہدایت کے مطابق جیل انتظامیہ نے اہم فیصلے لیئے ہیں اس کے تحت قیدیوں اور بندیوں کو پھرلو اور پیرول کی تجویز کی گئی ہے ۔ وزیر جیل نے بتایا کہ ایسے حوالاتی جو زیادہ سے زیادہ سات سال تک کی سزا کے جرم میں جیل میں بند ہیں اور ان پر کوئی دیگر کیس عدالتوں میں رکےہوئے نہیں ہیں انہیں بھی جیل میں اچھے چال چلن کی بنیاد پرضمانت پر رہا کیا جائےگ ا یا پھر ۴۵؍سے ۶۰؍دن تک کی عبوری ضمانت پر رہا کیا جائے گا۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here