اسمبلی انتخابات میں کسی بڑی پارٹی سے اتحاد نہیں:اکھلیش

0
7

اٹاوہ: سماج وادی پارٹی(ایس پی)سربراہ و سابق وزیر اعلی اکھلیش یادو نے ریاست میں سال 2022 کے اسمبلی انتخابات میں اپنی پالیسی کی جانب اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ اسمبلی انتخابات میں ان کی پارٹی کسی بھی بڑی پارٹی سے اتحاد نہیں کرے گی بلکہ چھوٹی چھوٹی علاقائی پارٹیوں سے الحاق کر کے انتخابی میدان میں اترے گی۔
اپنے اہل خانہ کے ساتھ دیوالی منانے اپنے آبائی وطن اٹاوہ پہنچے اکھلیش نے یہاں میڈیا نمائندوں سے بات چیت میں بی جے پی کو بھی ہدف تنقید بناتے ہوئے کہا کہ بھارتیہ جنتا پارٹی کے اقتدار میں ترقی کا کوئی بڑا کام نہیں ہے جبکہ ناانصافی، ظل اور بدعنوانی کا چہار جانب دور دورہ ہے۔
دیوالی کی مبارک باد دینے کے بعد انہوں نے کہا کہ بی جے پی اقتدار میں بیٹیاں غیر محفوظ ہیں۔ جھوٹے مقدموں میں لوگوں کو پھنسایا جارہا ہے۔ پولیس کا رویہ ٹھیک نہیں ہے۔ حکومت کی پالیسیاں کسان مخالف ہیں۔ ریاست میں کسانوں کے سرسوں کے تیل کی جگہ بیرون ممالک سے تیل کو درآمد کیا جارہا ہے۔کسانوں کے وقار کو مجروح کیا جارہا ہے
چچا شیوپال یادو کی پارٹی سے اتحاد سے متعلق پوچھے گئے ایک سوال کے جواب میں ایس پی سربراہ نے کہا کہ ‘اس پارٹی کو بھی کہیں نہ کہیں شفٹ کیا جائے گا۔جسونت نگر ان کی سیٹ ہے۔ ایس پی نے وہ سیٹ ان کے لئے چھوڑ دی ہے اور آنے والے وقت میں انکے لوگ ملیں۔سرکار بنائیں ہم ان کے لیڈر کو کابینی وزیر بھی بنائیں گے۔
قابل ذکر ہے کہ سابق میں پرگتی شیل سماج وادی پارٹی(لوہیا) کے سربراہ و سابق ایس پی لیڈر شیوپال یادو بھی سماجو ادی پارٹی(ایس پی) سے اتحاد کی خواہش کااظہار کرچکے ہیں۔سال 2017 کے انتخابات سے قبل ہی اکھلیش اور شیوپال کے درمیان تلخی بڑھ گئی تھی۔ شیوپال نے بعد میں ایس پی سے علیحدگی اختیار کر کے پرگتی شیل سماج وادی پارٹی کی تشکیل کا اعلان کیا تھا۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here