لکھنؤ ہنوز کورونا ہاٹ اسپاٹ،429نئے کیسز،سی ایم او تبدیل

0
4

لکھنؤ: اترپردیش کی راجدھانی لکھنؤ ریاست میں بدستور کورونا ہاٹ اسپاٹ بناہواہے ہفتہ کو مریضوں کی تعداد نے سابقہ تمام ریکارڈ توڑ دئیے اور گذشتہ 24گھنٹوںمیں 429نئے معاملات درج کئے گئے ہیں۔
گذشتہ 7دنوں میں حکومت کی جانب سے تمام تر احتیاطی اقدام کے باوجود 2229نئے افراد میں کورونا وائرس کی تصدیق ہوئی ہے۔ہفتہ کو ریاستی حکومت نے لکھنؤ کے چیف میڈیکل افسر(سی ایم او)ڈاکٹر نریندر اگروال کا تبادلہ کرتے ہوئے ان کی جگہ پر ڈاکٹر راجندر پرسادسنگھ کو راجدھانی میں میڈیکل سہولیات کی کمان دی ہے۔
وہیں حکومت نے ڈائرکٹوریٹ ہیلتھ سروسز میں تعینات ہیلتھ ڈائرکٹر ڈاکٹر مدھو سکسینا کو شیام پرساد مکھر جی سول اسپتال لکھنؤ کا ڈائرکٹر اور چیف سپرنٹنڈنٹ نامزد کیا ہے۔
تاہم، حکومت کےتمام اقدامات کے باوجود لکھنؤ میں کورونا وائرس کے پھیلاؤ میں کنٹرول حاصل کرنے میں ناکام ثابت ہوئی ہے۔ مزید یہ ہے کہ ریاست کے وزیر صحت خود ہی کورونا وائرس سے متاثرہ ہوکر ہوم آئیسولیشن میں ہیں۔
وہیں ہیلتھ افسران کے دعوی کے مطابق ریاستی راجدھانی میں پازیٹیو کیسز میں اضافے کا سبب ٹیسٹنگ سہولیات میں اضافہ ہے۔لکھنو کے چار پولیس اسٹیشن اندرا نگر، غازی پور، آشیانہ اور سروجنی نگر کو سب سے حساس علاقہ قرار دیتے ہوئے ان علاقوں میں 20جولائی سے 25جولائی تک مکمل لاک ڈاؤن کا اعلان کیا گیا تھا۔ضلعی افسران نے بتایا کہ وہ بڑے کنٹین منٹ زون علاقوں کی فہرست میں کچھ اضافہ بھی کرسکتے ہیں۔اس ضمن میں آج رات کچھ فیصلہ لیا جاسکتا ہے۔حکومت کے اعدادو شمار کے مطابق اس وقت لکھنؤ میں 3337ایکٹو کیسز ہیں جبکہ کل 73افراد جاں بحق ہوئے ہیں۔لیکن قابل اطمینان بات یہ ہے کہ ابھی تک 2443افراد صحت یاب ہوئے ہیں جن میں آج اسپتالوں سے ڈسچارج ہوئے482افراد بھی شامل ہیں۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here