شراب نوشی پر پابندی سے متعلق سپریم کورٹ میں عرضی دائر

0
5

نئی دہلی: ادویات کے مقاصد کو چھوڑ کرشراب اور دیگر منشیات کے استعمال پر پابندی عائد کرنےکی ہدایت سے متعلق ایک عرضی بدھ کے روز سپریم کورٹ میں دائر کی گئی تھی۔
بھارتیہ جنتا پارٹی کے لیڈر اور وکیل اشوانی اپادھیائے نے یہ مفاد عامہ کی عرضی دائر کر کے ملک میں کورونا وائرس کے بڑھتے ہوئے کیسز کو مدِ نظر رکھتے ہوئے شراب اور دیگر منشیات پر پابندی عائد کرنے کے لئے ہدایت جاری کرنے کی درخواست کی ۔
عرضی میں استدعا کی گئی ہے کہ طبی استعمال کے علاوہ شراب اور دیگر منشیات کے استعمال پر پابندی عائد کرنے کے لئے ایک موثر پالیسی تیار کرنے کی ہدایت دینے کی درخواست کی گئی ۔ عرضی میں کہا گیا ہے کہ شراب کی بوتلوں اور کین کے دونوں طرف کم از کم 50 فیصد حصے میں اس کا استمعال صحت کے لئے نقصان دہ ہے ، کے تعلق سے وارننگ مشتہرہو نی چاہئے ۔
عرضی گزار کا کہنا ہے کہ شراب اور منشیات کے استعمال سے گھریلو تشدد ، خواتین کے خلاف جرائم کے ساتھ ساتھ چوٹ لگنے کا خطرہ بھی بڑھ جاتا ہے۔ اس کے استعمال سے شخص کے رویہ میں کافی تبدیل آتی ہے جو کووڈ وبا کے دوران زیادہ مہلک ثابت ہوسکتی ہے
۔عرضی میں دلیل دی گئی کہ کووڈ 19 وبا کے دوران شراب نوشی سے تیزی سے صحت خراب ہونے ، ذہنی صحت متاثر ہونے اور تشدد کے خطرے ہوتے ہیں ۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here