شعیب اختر نے دی تھی اٹھوا لینے کی دھمکی :عرفان پٹھان

0
6

نئی دہلی:ہندستانی کرکٹ ٹیم کے بہتریں آل راؤنڈر عرفان پٹھان نے انکشاف کیا ہے کہ سال 2006 میں پاکستانی کرکٹ ٹیم کے تیز گیند باز شعیب اختر نے انہیں اور دھونی کو اٹھوا لینے کی دھمکی دی تھی۔اس میں کوئی شک نہیں ہے کہ پاکستان کے سابق فاسٹ بولر شعیب اختر اپنے وقت میں سب سے زیادہ خطرناک گیند بازوں میں سے ایک تھے، مگر وہ کھلاڑیوں کے ساتھ سلیجنگ کرنے کے لئے بھی بدنام تھے۔کھلاڑیوں کو الٹا سیدھا کہنا، دھمکیاں دینا ان کی عادت میں شمار تھا۔اسپورٹس تک سے بات کرتے ہوئے عرفان پٹھان نے انکشاف کیا 2006 میں شعیب اختر نے انہیں اور دھونی کو اٹھوا لینے کی دھمکی دی تھی۔2006 میں فیصل آباد میں کھیلے گئے ٹیسٹ میچ میں عرفان نے 90 رنز بنائے تھے اور اس اننگز کی بدولت ٹیم انڈیا نے پہلی اننگز میں 15 رنز کی برتری حاصل کرلی تھی۔پہلی اننگز میں شعیب اختر نے سچن تندولکر کو آؤٹ کیا اور اس وقت شعیب کافی جارحانہ نظر آ رہے تھے۔انہوں نے باؤنسر کے ساتھ عرفان پٹھان کا خیر مقدم کیا۔عرفان نے کہا کہ کریز پر آتے ہی انہوں نے دھونی سے پوچھا کہ کیا چل رہا ہے۔دھونی نے مجھ سے کہا کہ کچھ نہیں آرام سے کھیلو۔ اختر کی پہلی گیند باؤنسر تھی جو میں دیکھ نہیں پایا اور گیند کان کے پاس سے وکٹ کیپر کے پاس چلی گئی۔اس وقت ٹیم لڑكھڑائی ہوئی تھی اور ہمیں اننگز کو سنبھالنا تھا۔ایسے میں میں نے اور دھونی نے پلان بنایا کہ اختر کے اسپیل کو ختم کیا جائے۔اس کے بعد میں نے معاملہ اپنے ہاتھ میں لیا اور دھونی سے کہا کہ میں اختر کو سلیج کروں گا آپ صرف ان پر ہنسنا۔دھونی میری بات مان گئے۔اس کے بعد شعیب اختر بھی سلیجنگ کرنے لگے اور گیند ریورس ہونے لگی تھی۔عرفان نے کہا کہ ہم چاہتے تھے کہ ریورس سوئنگ نہ ہو، اختر سلیج کرنے کے ساتھ ساتھ ایسی ہی گیند پھینک رہے تھے۔شعیب اختر نے سلیجنگ کرتے ہوئے کہا کہ اگر بات دس ہے تو وہ بیس بولیں گے۔اس کے بعد میں نے اختر کو کہا کہ پاجی اگلے اسپیل میں اتنی ہی جان لگے گی۔اس سے اختر ناراض ہو گئے اور کہا کہ بہت زیادہ بات کرتے ہو، تیرے کو میں اٹھوا لوں گا ادھر سے۔اس پر میں نے بھی کہا کہ پٹھان ہوں، آپ ایسی بات نہیں کر سکتے۔اس کے بعد شعیب اختر نے ناراض ہوکر بائونسر مارنا شروع کر دیا۔ اس کے ساتھ ہی ان کی یہ حکمت عملی کامیاب رہی اور ٹیم انڈیا اس میچ کو بچانے میں کامیاب رہی۔اس ٹیسٹ میچ میں عرفان پٹھان اور ایم ایس دھونی نے چھٹے وکٹ کے لئے 210 رن کی اہم شراکت کی تھی۔ دھونی نے اس میچ میں 153 گیندوں پر 19 چوکے اور 4 چھکوں کی مدد سے 148 رنز کی اننگز کھیلی تھی۔ شعیب اختر کے لیے وہ میچ زیادہ اچھا نہیں رہا تھا اور انہیں صرف سچن کا وکٹ ہی مل پایا۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here