کووڈ19 پر تحقیق کرنے والے چین نژاد پروفیسر کا امریکہ میں قتل

0
8

واشنگٹن: چین نژاد پروفیسر کو امریکہ میں قتل کر دیا گیا۔یہ واقعہ امریکی ریاست پنسلوانیا میں پیش آیا جہاں یونیورسٹی آف پیٹسبرگ کے اسسٹنٹ پروفیسر بنگ لیو کو ٹاؤن ہاؤس میں سر، گردن اور دھڑ پر گولی ماری کر ہلاک کر دیا گیا۔سی این این نے یہ اطلاع دیتے ہوئے یونیورسٹی کے حوالے سے بتایا کہ مقتول پروفیسر کووڈ-19 پر مؤثر اور نتیجہ خیز تحقیق کر رہے تھے۔کہا جاتا ہے کہ لیو نے ایس اے آر ایس-سی او وی-2 انفیکشن اور اس کے اثرات کو سمجھنے سے متعلق بامعنی نتائج حاصل کر لئے تھے۔پولیس کے مطابق پروفیسر بنگ لیو ٹاؤن ہاؤس میں سر، گردن اور دھڑ پر گولی لگنے کے باعث زخمی حالت میں پائے گئے تھے۔چھان بین کرنے والوں نے ایک اور نا معلوم شخص کو ان کی کار میں مردہ حالت میں موجودگی کا پتہ چلایا ہے۔ ان لوگوں کا اندازہ ہے کہ اس شخص نے ہی کار کے اندر لیو کو گولی مار کر ہلاک کرنے کے بعد خودکشی کر لی ہو گی۔پولیس کے مطابق دونوں ایک دوسرے کے واقف کار تھے۔ اس بات کے امکانات واضح نہیں کہ لیو کو چینی نژاد ہونے پر قتل کیا گیا ہے۔یونیورسٹی کی طرف ایک بیان میں بنگ لیو کی ناگہانی موت پر افسوس ظاہر کیا گیا ہے اور کہا گیا ہے کہ وہ ایک بہترین محقق اور یونیورسٹی کے ہونہار طالب علم تھے۔بیان میں لیو کے اہل خانہ سے تعزیت کی گئی ہے اور کہا گیا کہ ادارہ لیو کے اہل خانہ، دوستوں اور ساتھیوں سے اس مشکل وقت میں ہمدردی کا اظہار کرتا ہے۔پیٹسبرگ یونیورسٹی کے اسکول آف میڈیسن کے اراکین کا کہنا تھا کہ مقتول غیرمعمولی محقق اور نگران تھے۔اسکول آف میڈیسن کے اراکین نے عہد کیا کہ وہ بنگ لیو کی تحقیق کو مکمل کریں گے۔خیال رہے کہ کورونا وائرس کے پھیلنے سے امریکہ اور چین کے درمیان نئی کشیدگی شروع ہو گئی ہے۔صدر امریکہ ڈونلڈ ٹرمپ اور سیکریٹری اسٹیٹ مائیک پومپیو کا الزام ہے کہ کورونا وائرس چین کی غفلت کا نتیجہ ہے اور چین نے اس طرح دوسرے ملکوں کو زد میں لینے کی کوشش کی ہے۔ چین ایسے الزامات کو مسترد کرتا آرہا ہے۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here