پوری دنیا مشترکہ طور پر کووِڈ-19 کا ٹیکہ ڈھونڈے گی

0
7

جنیوا / نئی دہلی:دنیا میں منفرد تاریخی پہل کے تحت تمام ملکوں کے سائنسداں مشترکہ طور پر کورونا ’کووِڈ-19‘ کا ٹیکہ ڈھونڈیں گے۔ اس کوشش میں پرائیویٹ سیکٹر،عالمی ادارے اور مختلف ممالک کی حکومتیں مالی مدد مہیا کروائیں گی۔عالمی ادارہ صحت (ڈبلیو ایچ او)، یورپی یونین، جرمنی حکومت اور بل اینڈ میلنڈہ گیٹس فاؤنڈیشن نے ایک مشترکہ پریس کانفرنس میں اس کا اعلان جس سے اقوام متحدہ کے سکریٹری جنرل انتونیو گٹیرس، کئی ملکوں اور بین الاقوامی تنظمیوں کے سربراہوں نے بھی خطاب کیا۔ کانفرنس میں ٹیکہ تیار کرنے، اس کے پروڈکشن اور یکساں تقسیم کے لیے ’ایکٹ‘ نام سے ایک ’ٹول‘ لانچ کیا گیا۔ اس کا مقصد ٹیکے کی افزودگی اور اس کے بعد پروڈکشن کو رفتار دینا ہے۔جرمنی کی حکومت کی قیادت میں 04 مئی کو ایک عالمی پروگرام میں مختلف ممالک اور تنظیمیں اس کے لیے مالی مدد کا اعلان کریں گی۔ فی الحال 7.5 ارب یورو کی رقم اکٹھا کرنے کا ہدف رکھا گیا ہے۔اس ’ایکٹ ٹول‘ کے تحت ہر ملک میں کووِڈ-19 کے ٹیکے پر ہونے والی ریسرچ کے اعداد و شمار شیئر کرنے ہوں گے۔ ایک طرح سے پوری دنیا کے سائنسداں متحد ہو کر یہ ٹیکہ بنائیں گے۔ مشترکہ طور پر کام کرنے سے ٹیکہ جلد تیار کرنے میں مدد ملے گی۔ ساتھ ہی اس کے لیے فنڈ کی بھی کوئی قلت نہیں ہوگی۔ اس پیسے کا استعمال ٹیکہ کی پیداوار کے لیے بھی کیا جائے گا۔ سائنسدانوں کی جانب سے ریسرچ کرنے کے بعد تمام ممالک مشترکہ طور پر اس کا پروڈکشن کریں گے اور یکساں تقسیمم کیا جائے گا۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here